Be-Dili Kya Yunhi Din Guzar Jaenge

بے دلی کیا یوں ہی دن گزر جائیں گے
صرف زندہ رہے ہم تو مر جائیں گے

رقص ہے رنگ پر رنگ ہم رقص ہیں
سب بچھڑ جائیں گے سب بکھر جائیں گے

یہ خراباتیان خرد باختہ
صبح ہوتے ہی سب کام پر جائیں گے

کتنی دل کش ہو تم کتنا دلجو ہوں میں
کیا ستم ہے کہ ہم لوگ مر جائیں گے

ہے غنیمت کہ اسرار ہستی سے ہم
بے خبر آئے ہیں بے خبر جائیں گے

 

be-dili kya yunhi din guzar jaenge
sirf zinda rahe hum to mar jaenge

raqs hai rang par rang ham-raqs hain
sab bichhad jaenge sab bikhar jaenge

ye kharabaatiyan-e-khirad-bakhta
subh hote hi sab kaam par jaenge

kitni dilkash ho tum kitna dil-ju hun main
kya sitam hai ki hum log mar jaenge

hai ghanimat ki asrar-e-hasti se hum
be-khabar aae hain be-khabar jaenge

اپنا تبصرہ بھیجیں