Bari Ronq The Is Ghar Mein Yeh Ghar Asia Nahi Tha

Ghazal
Bari Ronq The Is Ghar Mein Yeh Ghar Asia Nahi Tha
Gile shikway bhi rehtay thay magar aisa nahi tha

 

Jahaan kuch shire baatin the wahaan kuch talkh baatin the
Magar un talkh baaton ka asar aisa nahi tha

 

Inhi shakho pe gul thay barg thay kaliyain thi gonchay thay
Yeh mosam jab na aisa tha shajar aisa nahi tha
غزل
بڑی رونق تھی اس گھر میں یہ گھر ایسا نہیں تھا
گلے شکوے بھی رہتے تھے مگر ایسا نہیں تھا

 

جہاں کچھ شیری باتیں تھی وہیں کچھ تلخ باتیں تھی
مگر اُن تلخ باتوں کا اثر ایسا نہیں تھا

 

انہیں شاخوں پہ گل تھے برگ تھے کلیاں تھی گونچے تھے
یہ موسم جب نہ ایسا تھا شجر ایسا نہیں تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں