Aurat

نظم:عورت
وجود زن سے ہےتصویر کائنات میں رنگ
اسی کے ساز سے ہے زندگی کا سوز دروں
شرف میں بڑھ کے ثریا سے مشت خاک اس کی
کہ ہر شرف ہے اسی درج کا در مکنوں
مکالمات فلاطوں نہ لکھ سکی ، لیکن
اسی کے شعلے سے ٹوٹا شرار افلاطوں
Nazam:Aurat
Wujood-e-Zan Se Hai Tasveer-e-Kainat Mein Rang
Issi Ke Saaz Se Hai Zindagi Ka Souz-e-Darun
 
Sharaf Mein Barh Ke Sureya Se Musht-e-Khak Iss Ki
Ke Har Sharaf Hai Issi Durj Ka Dur-e-Makoon
 
Makalat-e-Falatoon Na Likh Saki, Lekin
Issi Ke Shole Se Toota Sharaar-e-Aflatoon

اپنا تبصرہ بھیجیں