Admi Waqt Par Gaya Hoga

آدمی وقت پر گیا ہوگا
وقت پہلے گزر گیا ہوگا

وہ ہماری طرف نہ دیکھ کے بھی
کوئی احسان دھر گیا ہوگا

خود سے مایوس ہو کے بیٹھا ہوں
آج ہر شخص مر گیا ہوگا

شام تیرے دیار میں آخر
کوئی تو اپنے گھر گیا ہوگا

مرہم ہجر تھا عجب اکسیر
اب تو ہر زخم بھر گیا ہوگا


Admi waqt par gaya hoga
Waqt pehle guzar gaya hoga

Who hmari traf na dekh ky bhi
Koi Ehsan dhar gya hoga

Khud se mayoos ho ky betha hun
Aj har shakhs mar gaya hoga

Sham tere dyar mein aakhir
Koi to apne ghar gaya hoga

Marham hijar tha ajab akseer
Ab to har zakhm bhar gaya hoga

اپنا تبصرہ بھیجیں