Us Ki Tasveerain Hain Dilkash Tou Hungai tehzeeb hafi ghazal

Us Ki Tasveerain Hain Dilkash Tou Hungai

Ghazal
Us Ki Tasveerain Hain Dilkash Tou Hungai
Jaisi dewarain hain waisa sayya hai

Ek mein hun jo tere qatal ki koshish mein tha
Ek tu hai jo jail mein khana laya hai

Us ki tasveerain hain dilkash tou hungai
Jaisi dewarain hain waisa sayya hai
غزل
اُس کی تصویریں ہیں دلکش تو ہوں گی
جیسی دیواریں ہیں ویسا سایہ ہے

اک میں ہوں جو تیرے قتل کی کوشش میں تھا
اک تو ہے جو جیل میں کھانا لایا ہے

اُس کی تصویریں ہیں دلکش تو ہوں گی
جیسی دیواریں ہیں ویسا سایہ ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں