Tou Ne Kya Qandeel Jala Di Shehzadi| Tehzeeb hafi

Tou Ne Kya Qandeel Jala Di Shehzadi| Tehzeeb hafi

Tou Ne Kya Qandeel Jala Di Shehzadi
Surkh hoi jati hai wadi shehzadi

Sheesh mahal ko saaf kiya tere kehne par
Aaino se gard hata di shehzadi

Ab tou khwab kade se bahir paon rakh
Laut gayi hain sab faryadi shehzahi

Tere hi kehne par aik sipahi ne
Apne ghar ko aag laga de shehzadi

Mein tere dushman Lashkar ka shehzada
Kaisay mumkin hai yeh shaadi shehzahi

Tou Ne Kya Qandeel Jala Di Shehzadi
Surkh hoi jati hai wadi shehzadi
غزل
تو نے کیا قندیل جلا دی شہزادی
سرخ ہوئی جاتی ہے وادی شہزادی

شیش محل کو صاف کیا ترے کہنے پر
آئنوں سے گرد ہٹا دی شہزادہ

اب تو خواب کدے سے باہر پاؤں رکھ
لوٹ گئے ہیں سب فریادی شہزادی

تیرے ہی کہنے پر ایک سپاہی نے
اپنےگھر کو آگ لگا دی شہزادی

میں تیرے دشمن لشکر کا شہزادہ
کیسے ممکن ہے یہ شادی شہزادی

اپنا تبصرہ بھیجیں