Shaoor Waqt Peh Dil Ki Dawa Hoi Hoti

Shaoor Waqt Peh Dil Ki Dawa Hoi Hoti

Shaoor Waqt Peh Dil Ki Dawa Hoi Hoti
To aaj fikar nah hoti shifa hoi hoti

Marota bhi agar aap aa gaye hote
Tamaniyat hamein be inteha hoi hoti

Nah jane kitne baras ho gaye fughan karte
Kabhi to dadrasi aye khuda hoi hoti

Nah tha naseeb mein dil ki murad bar aana
To kash sabar ki adat aata hoi hoti

Hamara hal tumhari samjh mein aa jata
Agar kisi se mohabbat zara hoi hoti

Hum apne aap se rehte nah be khabar to bhala
Hamari surat halaat kya hoi hoti

Shaoor aap ki aamad se lakh behtar tha
Ghareeb khane pe nazil bala hoi hoti

Shaoor waqt peh dil ki dawa hoi hoti
To aaj fikar nah hoti shifa hoi hoti
غزل
شعور وقت پہ دل کی دوا ہوئی ہوتی
تو آج فکر نہ ہوتی شفا ہوئی ہوتی

مروتا بھی اگر آپ آگئے ہوتے
طمانیت ہمیں بے انتہا ہوئی ہوتی

نہ جانے کتنے برس ہوگئے فغان کرتے
کبھی تو دادرسی اے خدا ہوئی ہوتی

نہ تھا نصیب میں دل کی مراد بر آنا
تو کاش صبر کی عادت عطا ہوئی ہوتی

ہمارا حال تمہاری سمجھ میں آ جاتا
اگر کسی سے محبت ذرا ہوئی ہوتی

ہم اپنے آپ سے رہتے نہ بے خبر تو بھلا
ہماری صورت حالات کیا ہوئی ہوتی

شعور آپ کی آمد سے لاکھ بہتر تھا
غریب خانے پہ نازل بلا ہوئی ہوتی

شعور وقت پہ دل کی دوا ہوئی ہوتی
تو آج فکر نہ ہوتی شفا ہوئی ہوتی

اپنا تبصرہ بھیجیں