Pas Gard-E-Jada Dard Noor Ka Qafla Bhi

Pas Gard-E-Jada Dard Noor Ka Qafla Bhi

Pas Gard-E-Jada Dard Noor Ka Qafla Bhi Tou Dekhte
Jo dilon se ho ke guzar raha hai wo rasta bhi tou dekhte

Yeh dhowan jo hai yeh kahan ka hai wo jo aag thi wo kahan ki thi
Kabhi rawiyan-e-khabar zada pas-e-waqia bhi tou dekhte

Yeh gulo gerfta-o-basta rasn-e-jafa mere hum qalam
Kabhi jabron ke dilon mein khauf mukalma bhi tu dekhte

Yeh jo patharon mein chupi hoi hai shabeeh yeh bhi kamal hai
Wo jo aainay mein humak raha hai wo mojza bhi tu dekhte

Jo hawa ke rukh peh kholay howay hain wo bad-e-ban tou nazar mein hain
Wo jo mauj khoon se ulajh raha hai wo hosla bhi tu dekhte

Yeh jo aab zar se raqam hoi hai yeh dastan bhi hai mustanad
Wo jo khon-e-dil se likha geya hai wo hashia bhi tou dekhte

Mein tou khaak tha kisi chashm-e-naz mein aa gaya hoon tou mehar hoon
Mere meharban kabhi ek nazar mera silsilla bhi tu dekhte

Pas gard-e-jada dard noor ka qafla bhi tou dekhte
Jo dilon se ho ke guzar raha hai wo rasta bhi tou dekhte
غزل
پس گرد جادہ درد نور کا قافلہ بھی تو دیکھتے
جودلوں سے ہو کے گزر رہا ہے وہ راستہ بھی تو دیکھتے

یہ دھواں جو ہے یہ کہاں کا ہے وہ جو آگ تھی وہ کہاں کی تھی
کبھی راویانِ خبر زدہ پس واقعہ بھی تو دیکھتے

یہ گلو گرفتہ و بستہ رسن جفا مرے ہم قلم
کبھی جابروں کے دلوں میں خوف مکالمہ بھی تو دیکھتے

یہ جو پتھروں میں چھپی ہوئی ہے شبیہ یہ بھی کمال ہے
وہ جو آئینے میں ہمک رہا ہے وہ معجزہ بھی تو دیکھتے

جو ہوا کے رخ پہ کھلے ہوئے ہیں وہ بادباں تو نظر میں ہیں
وہ جو موج خوں سے الجھ رہا ہے وہ حوصلہ بھی تو دیکھے

یہ جو آب زر سے رقم ہوئی ہے یہ داستاں بھی ہے مستند
وہ جو خون دل سے لکھا گیا ہے وہ حاشیہ بھی تو دیکھتے

میں تو خاک تھا کسی چشم ناز میں آ گیا ہوں تو مہر ہوں
مرے مہرباں کبھی اک نظر مرا سلسلہ بھی تو دیکھتے

پس گرد جادہ درد نور کا قافلہ بھی تو دیکھتے
جودلوں سے ہو کے گزر رہا ہے وہ راستہ بھی تو دیکھتے

اپنا تبصرہ بھیجیں