Nahi Khasta Hali Peh Na Mutmain Hum

Nahi Khasta Hali Peh Na Mutmain Hum

Nahi Khasta Hali Peh Na Mutmain Hum
Yahi taat makhmal yeh taat raisham

Hum achhi tarah jante hain yeh na sih
Keh sachai ka ajar hai saghir sam

Kisi hal mein bhi rakhe rakhne wala
Bhala dahir mein kia khushi aur kia gham

Nahi apni gayab dimaghi peh hairat
Mohabbat mein hota hai aksar yeh alam

Koi shor sa dil mein rehta hai barpa
Dama dam dama dam dama dam dama dam

Rahe tazkiray aman ke aashti ke
Magar bastiyun par baraste rahe hum

Kahan chain se aaj duniya mein koi
Yeh Jannat bana di gai hai Jahannum

Nah guzra kabhi aik lamha sukoon se
Mohabbat mein aaye woh din raat peham

Nahi khasta hali peh na mutmain hum
Yahi taat makhmal yeh taat raisham
غزل
نہیں خستہ حالی پہ نا مطمئن ہم
یہی ٹاٹ مخمل یہ ٹاٹ ریشم

ہم اچھی طرح جانتے ہیں یہ ناصح
کہ سچائی کا اجر ہے ساغر سم

کسی حال میں بھی رکھے رکھنے والا
بھلا دہر میں کیا خوشی اور کیا غم

نہیں اپنی غائب دماغی پہ حیرت
محبت میں ہوتا ہے اکثر یہ عالم

کوئی شور سا دل میں رہتا ہے برپا
دما دم دما دم دما دم دما دم

رہے تذکرے امن کے آشتی کے
مگر بستیوں پر برستے رہے ہم

کہاں چین سے آج دنیا میں کوئی
یہ جنت بنا دی گئی ہے جہنم

نہ گزرا کبھی ایک لمحہ سکوں سے
محبت میں آئے وہ دن رات پیہم

نہیں خستہ حالی پہ نا مطمئن ہم
یہی ٹاٹ مخمل یہ ٹاٹ ریشم

اپنا تبصرہ بھیجیں