Munkir Banay Jo Khud Ko Supord-E-Khak Karay

Munkir Banay Jo Khud Ko Supord-E-Khak Karay

Munkir Banay Jo Khud Ko Supord-E-Khak Karay
Khalik sab kery tou yeh makhloq kia karay

Mein manta hoon mera aqida khrab hai
Banda samjh kar chor dain Allah bhala karay

Koi tou ho mein jis ko dukhray suna sakon
Koi tou ho jo mujhe duain diya karay

Roh se ishq kia aur badan chor diya
Mein ny insan ka abhai watan chor diya

Wo mere hath mein tha kuch bhi mein kar sakta tha
Meri khaish pe hoi havi thakan chor diya

Muj se kia bichra hai wo aise khabar phail gai
Jaise jia ny amitabachan chor diya

Us ne youn chor di payal keh bahut bharoi hai
Aur payal nay bhi es dukh mein chanan chor diya

Khak tou shahad banay gi keh ras lai nahi
Phool choos ai magar us ka badan chor diya

Chal pari wo shikam mein lay ke nishani meri
Aik surkhi ke liye sara matan chor diya

Munkir banay jo khud ko supord-e-khak karay
Khalik sab kery tou yeh makhloq kia karay
غزل
منکر بنے جو خود کو سپرد خدا کہے
خالق سب کرے تو یہ مخلوق کیا کرے

میں مانتا ہوں میرا عقیدہ خراب ہے
بندہ سمجھ کر چھوڑ دیں اللہ بھلا کرے

کوئی تو ہو میں جس کو دکھڑے سنا سکوں
کوئی تو ہو جو مجھے دعائیں دیا کرے

روح سے عشق کیا اور بدن چھوڑ دیا
میں نے انسان کا آبائی وطن چھوڑ دیا

وہ میرے ہاتھ میں تھا کچھ بھی میں کر سکتا تھا
میری خاہش پہ ہوئی ہاوی تھکن چھوڑ دیا

مجھ سے کیا بچھڑا ہے وہ ایسے خبر پھیل گئی
جیسے جیا نے امتابچن چھوڑ دیا

اُس نے یوں چھوڑ دی پائل کہ بہت بھاری ہے
اور پائل نے بھی اس دکھ میں چھنن چھوڑ دیا

خاک تو شہد بنائے گی کہ رس لائی نہیں
پھول چوس آئی مگر اُس کا بدن چھوڑ دیا

چل پڑی وہ لے کے شکم میں نشانی میری
ایک سرخی کے لیے سارا متن چھوڑ دیا

منکر بنے جو خود کو سپرد خدا کہے
خالق سب کرے تو یہ مخلوق کیا کرے

اپنا تبصرہ بھیجیں