Mere Seene Mein Kuch Zir-O-Zabr Hai

Mere Seene Mein Kuch Zir-O-Zabr Hai

Mere Seene Mein Kuch Zer-O-Zabr Hai
Chaman mein galaban waqat-e-seher hai

Chala jata hun aksar sheher walon
Biya-baan mein bhi mera aik ghar hai

Jo chehere per nazar ati hai mere
Meri rangat nahi gird-e-saffar hai

Koi tikta nahi dil mein zyada
Yeh goya ghar nahi hai rah-guzar hai

Nazar atay hain amal sab ko
Mere ahwaal per kis ki nazar hai

Agar anwar sho’our aisa hai to
Nazar andaz kar dena bashar hai

Mere seene mein kuch zer-o-zabr hai
Chaman mein galabn waqat saher hai
غزل
میرے سینے میں کچھ زیر و زبر ہے
چمن میں غالباََ وقتِ سحر ہے

چلا جاتا ہوں اکثر شہر والوں
بیاباں میں بھی میرا ایک گھر ہے

جو چہرے پر نظر آتی ہے میرے
میری رنگت نہیں گرد سفر ہے

کوئی ٹکتا نہیں دل میں زیادہ
یہ گویا گھر نہیں ہے راہ گزر ہے

نظر آتے ہیں اعمال سب کو
میرے احوال پر کسی کی نظر ہے

اگر انور شعور ایسا کرے تو
نظر انداز کر دینا بشر ہے

میرے سینے میں کچھ زیر و یبر ہے
چمن میں غالباََ وقتِ سحر ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں