Mein Brush Chhor Chukka Aakhri Tasveer Ke Baad

Mein Brush Chhor Chukka Aakhri Tasveer Ke Baad

Mein Brush Chhor Chukka Aakhri Tasveer Ke Baad
Mujh se kuch ban nahi paya teri tasveer ke baad

Mushtarik dost bhi chootay hain tujhe chhorne par
Yani deewar hatani pari tasveer ke baad

Yaar tasveer mein tanha hoon magar log milay
Kai tasveer se pehle kai tasveer ke baad

Dosra ishq muyassar hai magar karta nahi
Kon dekhe ga purani nai tasveer ke baad

Bhaij deta hoon magar pehle batadon tujh ko
Mujh se milta nahi koi meri tasveer ke baad

Khushk deewar mein seelen ka sabab kya hoga
Aik adad zang lagi keel thi tasveer ke baad

Mein brush chhor chukka aakhri tasveer ke baad
Mujh se kuch ban nahi paya teri tasveer ke baad
غزل
میں برش چھوڑ چکا آخری تصویر کے بعد
مجھ سے کچھ بن نہیں پایا تری تصویر کے بعد

مشترک دوست بھی چھوٹے ہیں تجھے چھوڑنے پر
یعنی دیوار ہٹانی پڑی تصویر کے بعد

یار تصویر میں تنہا ہوں مگر لوگ ملے
کئی تصویر سے پہلے کئی تصویر کے بعد

دوسرا عشق میسر ہے مگر کرتا نہیں
کون دیکھے گا پرانی نئی تصویر کے بعد

بھیج دیتا ہوں مگر پہلے بتادوں تجھ کو
مجھ سے ملتا نہیں کوئی مری تصویر کے بعد

خشک دیوار میں سیلن کا سبب کیا ہوگا
ایک عدد زنگ لگی کیل تھی تصویر کے بعد

میں برش چھوڑ چکا آخری تصویر کے بعد
مجھ سے کچھ بن نہیں پایا تری تصویر کے بعد
Poet: Umair Najmi

اپنا تبصرہ بھیجیں