Mar Mitane Ki Tadbir Thi Hijab Na Tha

Mar Mitane Ki Tadbir Thi Hijab Na Tha

Mar Mitane Ki Tadbir Thi Hijab Na Tha
Wagarna kon se din husan be naqab tha

Agarcha nazkash saghar sharab na tha
Khumar khane mein mujh sa koi kharab na tha

Khula tilism-e-tamanna tu khul gaya ye bhi
Keh ek faraib nazar tha tira shabab na tha

Khayal-e-dost teri jalwa tabyion ki qasm
Jo tou na tha meri duniya mein aftab na tha

Tire firaq ki ratin thin es qadar maghmum
Keh dagh khatir-e-mahzon tha mahtab na tha

Bura ho nala-e-paihman ka kuch dinon pehle
Khamosh raat ke dil mein yeh pech-o-tab na tha

Nigha milte hi ghash kha ke gir parrin nazren
Thi ek barq-e-mushakkal tera shabab na tha

Azal ke din se hain hum mast-e-jalwa saqi
Humare samne kis roz aftab na tha

Kuch apne saz nafs ki na qadar ki tou ne
Keh es rabab se behtar koi rabab na tha

Dil-e-kharab ka ehsan ab khuda hafiz
Kharab tha magar aisa kabhi kharab na tha

Mar mitane ki tadbir thi hijab na tha
Wagarna kon se din husan be naqab tha
غزل
مرے مٹانے کی تدبیر تھی حجاب نہ تھا
وگرنہ کون سے دن حسن بے نقاب نہ تھا

اگرچہ نازکش ساغر شراب نہ تھا
خمار خانے میں مجھ سا کوئی خراب نہ تھا

کھلا طلسم تمنا تو کھل گیا یہ بھی
کہ اک فریب نظر تھا ترا شباب نہ تھا

خیال دوست تری جلوہ تابیوں کی قسم
جو تو نہ تھا مری دینا میں آفتاب نہ تھا

ترے فراق کی راتیں تھیں اس قدر مغموم
کہ داغ خاطر محزوں تھا ماہتاب نہ تھا

برا ہو نالہ پیہم کا کچھ دنوں پہلے
خاموش رات کے دل میں یہ پیچ وتاب نہ تھا

نگاہ ملتے ہی غش کھا کےگر پڑیں نظریں
تھی ایک برق مشکل ترا شباب نہ تھا

ازل کےدن سے ہیں ہم مست جلوہ ساقی
ہمارے سامنے کس روز افتاب نہ تھا

کچھ اپنے ساز نفس کی نہ قدر کی تو نے
کہ اس رباب سے بہتر کوئی رباب نہ تھا

دل خراب کا احسان اب خدا حافظ
خراب تھا مگر ایسا کبھی خراب نہ تھا

مرے مٹانے کی تدبیر تھی حجاب نہ تھا
وگرنہ کون سے دن حسن بے نقاب نہ تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں