Jis Ne Sayyad Ki Aankhon Mein Aankhen Dali

Jis Ne Sayyad Ki Aankhon Mein Aankhen Dali

Jis Ne Sayyad Ki Aankhon Mein Aankhen Dali
Woh parinda kabhi aazad nahi ho sakta

Khud agar khailti rehti hai meri mitti se
Aur kehti hai mein ijaz nahi ho sakta

Jis ne Sayyad ki aankhon mein aankhen dali
Woh parinda kabhi aazad nahi ho sakta
غزل
جس نے سیاد کی آنکھوں میں آنکھیں ڈالی
وہ پرندہ کبھی آزاد نہیں ہو سکتا

خود اگر کھیلتی رہتی ہے میری مٹی سے
اور کہتی ہے میں اعجاز نہیں ہو سکتا

جس نے سیاد کی آنکھوں میں آنکھیں ڈالی
وہ پرندہ کبھی آزاد نہیں ہو سکتا

اپنا تبصرہ بھیجیں