Hussain Tum Nahi Rahe Tumhara Ghar Nahi Raha

Hussain Tum Nahi Rahe Tumhara Ghar Nahi Raha

Hussain Tum Nahi Rahe Tumhara Ghar Nahi Raha
Magar tumhare baad zalimon ka darr nahi raha

Madina-o-najaf se karbala tak ek silsila
Idhar jo aa gaya wo phir idhar udhar nahi raha

Sadaye astagasa Hussain ke jawab mein
Jo harf bhi raqam howa wo be asar nahi raha

Safien jamen tu karbala mein bat khul ke aa gai
Koi bhi holeya nifaaq kaar gar nahi raha

Bas ek naam un ka naam aur un ki nisbatein
Joz un ke phir kisi ka dehan umar bhar nahi raha

Koi bhe hon kisi tarf ka hon kisi nsab ka hon
Jo tum se monharif huwa wo mutaabar nahi raha

Hussain tum nahi rahe tumhara ghar nahi raha
Magar tumhare baad zalimon ka darr nahi raha
غزل
حسین ؓتم نہیں رہے تمہارا گھر نہیں رہا
مگر تمہارے بعد ظالموں کا ڈر نہیں رہا

مدینہ و نجف سے کربلا تک ایک سلسلہ
ادھر جو آ گیا وہ پھر اِدھر اُدھر نہیں رہا

صدائے استغاثہ حسین ؓ کے جواب میں
جو حرف بھی رقم ہوا وہ بے اثر نہیں رہا

صفیں جمیں تو کربلا میں بات کھل کے آ گئی
کوئی بھی حیلہ نفاق کارگر نہیں رہا

بس ایک نام اُن کا نام اور اُن کی نسبتیں
جز اُن کے پھر کسی کا دھیان عمر بھر نہیں رہا

کوئی بھی ہو کسی طرف کا ہو کسی نسب کا ہو
جو تم سے منحرف ہوا وہ معتبر نہیں رہا

حسین ؓتم نہیں رہے تمہارا گھر نہیں رہا
مگر تمہارے بعد ظالموں کا ڈر نہیں رہا

اپنا تبصرہ بھیجیں