Dil Bachpan Ke Sang Ke Pechay Pagal Hai

Dil Bachpan Ke Sang Ke Pechay Pagal Hai

Dil Bachpan Ke Sang Ke Pechay Pagal Hai
Kaghaz door patang ke pechay pagal hai

Yar mein itni saanwli kaisay bhao tujhe
Har koi goray rang ke pechay pagal hai

Shahr kabeer ki ik dosheeza heer hoi
Aur mowwarrikh jhang ke pechay pagal hai

Shahzadi shahzada khush aur banjara
Tooti hoi ik wang ke pechay pagal hai

Mein hoon jhalli uss ke ishq mein aur woh shakhs
Aaj bhi apni mang ke pechay pagal hai

Dil bachpan ke sang ke pechay pagal hai
Kaghaz door patang ke pechay pagal hai
غزل
دل بچپن کے سنگ کے پیچھے پاگل ہے
کاغذ ڈور پتنگ کے پیچھے پاگل ہے

یار میں اِتنی سانولی کیسے بھاؤ تجھے
ہر کوئی گورے رنگ کے پیچھے پاگل ہے

شہر کبیر کی اک دوشیزہ ہیر ہوئی
اور مؤرخ جھنگ کے پیچھے پاگل ہے

شہزادی ، شہزادہ خوش اور بنجارہ
ٹوٹی ہوئی اک ونگ کے پیچھے پاگل ہے

میں ہوں جھلی اُس کے عشق میں اور وہ شخص
آج بھی اپنی منگ کے پیچھے پاگل ہے

دل بچپن کے سنگ کے پیچھے پاگل ہے
کاغذ ڈور پتنگ کے پیچھے پاگل ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں