Bichar Kar Un Se Youn Gham |Ghazal Ehsan Da

Bichar Kar Un Se Youn Gham |Ghazal Ehsan Da

Bichar Kar Un Se Youn Gham Mein Guzari Zindagi Hum Ne
Sahar tareek dekhi surkh payi chandni hum ne

Hamein daawa nahi tanha nibahi dosti hum ne
Mohabbat ko sambhala hai kabhi tum ne kabhi hum ne

Khushi gham mein nazar aayi khoshi mein gham nazar aaya
Abhi duniya peh dali thi nigaah sar sari hum ne

Bari be chaargi nikli bohat hi naarsi payi
Aazal ke rooz barh kar le tu li thi bandage hum ne

Jahan saaz mohabbat par mughni ga nahi sakta
Wahan naghma alapa hai kabhi tum ne kabhi hum ne

Tumhein hogay nigaah shoq ka markaz tumhein hogay
Agar iss zindagi ke baad payi zindagi hum ne

Hamare samne har waqt anjaam shekayat thi
Kahi ko un kahi kar di sunni ko un sunni hum ne

Bharegi iss mein rang ehsan unya inqilaabon se
Lahoo se apne ik tasweer aisi khench dain hum ne

Bichar kar un se youn gham mein guzari zindagi hum ne
Sahar tareek dekhi surkh payi chandni hum ne
غزل
بچھڑ کر اُن سے یوں غم میں گزاری زندگی ہم نے
سحر تاریک دیکھی سرخ پائی چاندنی ہم نے

ہمیں دعویٰ نہیں تنہا نباہی دوستی ہم نے
محبت کو سنبھالا ہے کبھی تم نے کبھی ہم نے

خوشی غم میں نظر آئی خوشی میں غم نظر آیا
ابھی دنیا پہ ڈالی تھی نگاہ سر سری ہم نے

بڑی بے چارگی نکلی بہت ہی نارسی پائی
ازل کے روز بڑھ کر لے تو لی تھی بندگی ہم نے

جہاں ساز محبت پر مغنی گا نہیں سکتا
وہاں نغمہ الاپا ہے کبھی تم نے کبھی ہم نے

تمہیں ہوگے نگاہ شوق کا مرکز تمہیں ہوگے
اگر اس زندگی کے بعد پائی زندگی ہم نے

ہمارے سامنے ہر وقت انجام شکایت تھی
کہی کو ان کہی کر دی سنی کو ان سنی ہم نے

بھرے گی اس میں رنگ احسان انیا انقلابوں سے
لہو سے اپنے اک تصویر ایسی کھینچ دیں ہم نے

بچھڑ کر اُن سے یوں غم میں گزاری زندگی ہم نے
سحر تاریک دیکھی سرخ پائی چاندنی ہم نے

Read more click here

اپنا تبصرہ بھیجیں