Basharat Ho Keh Ab Mujh Sa Koi Pagal

Basharat Ho Keh Ab Mujh Sa Koi Pagal

Basharat Ho Keh Ab Mujh Sa Koi Pagal Nah Aaye Ga
Yeh daur aakhir deewangi hai beet jayega

Kisi ki zindagi zayaa nah hogi ab mohabbat mein
Koi dhoka nah de ga ab koi dhoka nah khaye ga

Nah ab utray ga qudsi koi insaano ki basti par
Nah ab jungle mein charwaha koi bheerein charaye ga

Giroh ibn aadam lakh bhatkay lakh sar patkay
Ab iss andar se koi rasta bahir nah jaye ga

Bashar ko dekh kar be inteha afsoos aata hai
Nah maloom uss kharabati ko kis din hosh aaye ga

Mita bhi de mujhe ab aa musawwir ta bah ke aakhir
Banaye ga bigare ga bigare ga banaye ga

Mohabbat bhi kahin aye dost tardeedon se chhupti hai
Kisay qayal kare ga tou kisay bawar karaye ga

Ghanemat jaan agar do bol bhi kanon mein par jayen
Keh phir yeh bolne wala nah roye ga nah gaye ga

Shaoor aakhir usay hum se ziyada jante ho tum
Bohat seedha sahi lekin tumhein tou bech khaye ga

Basharat ho keh ab mujh sa koi pagal nah aaye ga
Yeh daur aakhir deewangi hai beet jayega
غزل
بشارت ہو کہ اب مجھ سا کوئی پاگل نہ آئے گا
یہ دور آخر دیوانگی ہے بیت جائے گا

کسی کی زندگی ضائع نہ ہوگی اب محبت میں
کوئی دھوکا نہ دے گا اب کوئی دھوکا نہ کھائے گا

نہ اب اُترے گا قدسی کوئی انسانوں کی بستی پر
نہ اب جنگل میں چرواہا کوئی بھیڑیں چرائے گا

گروہ ابن آدم لاکھ بھٹکے لاکھ سر پٹکے
اب اس اندر سے کوئی راستہ باہر نہ جائے گا

بشر کو دیکھ کر بے انتہا افسوس آتا ہے
نہ معلوم اُس خراباتی کو کس دن ہوش آئے گا

مٹا بھی دے مجھے اب اے مصور تا بہ کے آخر
بنائے گا بگاڑے گا بگاڑے گا بنائے گا

محبت بھی کہیں اے دوست تردیدوں سے چھپتی ہے
کسے قائل کرے گا تو کسے باور کرائے گا

غنیمت جان اگر دو بول بھی کانوں میں پڑ جائیں
کہ پھر یہ بولنے والا نہ روئے گا نہ گائے گا

شعور آخر اسے ہم سے زیادہ جانتے ہو تم
بہت سیدھا سہی لیکن تمہیں تو بیچ کھائے گا

بشارت ہو کہ اب مجھ سا کوئی پاگل نہ آئے گا
یہ دور آخر دیوانگی ہے بیت جائے گا
 

اپنا تبصرہ بھیجیں