Barf Akhir Chhat Gayi Shakhon Peh Pattay Aa Gaye

Barf Akhir Chhat Gayi Shakhon Peh Pattay Aa Gaye

Barf Akhir Chhat Gayi Shakhon Peh Pattay Aa Gaye
Kuchh dinon ki baat hai samjho parinde aa gaye

Mout ne Chakma diya tou zindagi ne Aa liya
Hadsay se bach gaye tou tere aagay aa gaye

Mein tou kab ka bol deta mujh ko tum se pyaar hai
Khirkion mein khilne wale phool aarhay aa gaye

Tuhmaton ka sara malba uss ke upar aa gaya
Hum bhi uss ke saath thay so hum bhi niche aa gaye

Sab ko aik karne ka apna shoq pura ho gaya
Jaise member par chahre thay waise niche aa gaye

Barf akhir chhat gayi shakhon peh pattay aa gaye
Kuchh dinon ki baat hai samjho parinde aa gaye
غزل
برف آخر چھٹ گئی شاخوں پہ پتے آ گئے
کچھ دنوں کی بات ہے سمجھو پرندے آ گئے

موت نے چکما دیا تو زندگی نے آ لیا
حادثے سے بچ گئے تو تیرے آگے آ گئے

میں تو کب کا بول دیتا مجھ کو تم سے پیار ہے
کھڑکیوں میں کھلنے والے پھول آڑھے آ گئے

تہمتوں کا سارا ملبہ اُس کے اوپر آ گیا
ہم بھی اُس کے ساتھ تھے سو ہم بھی نیچے آ گئے

سب کو ایک کرنے کا اپنا شوق پورا ہو گیا
جیسے ممبر پر چڑھے تھے ویسے نیچے آ گئے

برف آخر چھٹ گئی شاخوں پہ پتے آ گئے
کچھ دنوں کی بات ہے سمجھو پرندے آ گئے

اپنا تبصرہ بھیجیں