Ajab Hain Deen Ke Ahkam Arbi Mein Bheje

Ajab Hain Deen Ke Ahkam Arbi Mein Bheje

Ajab Hain Deen Ke Ahkam Arbi Mein Bheje
Ke jaise deen faqat arbi logon ke liye ho

Mere adeel tere faisloon pe shikwa nahi
Magar yeh dukh hai tera banda mushkelon mein hai
 
Mein kashmakash mein hoon kis kis ka itebaar karon
Tere saheefon ke be mail tarjume howay hain
 
Mein arbi sekh raha hoon keh teri maan sakon
Par es mein waqt lagay ga so mujh ko mohlat day
 
Mein teri baat ko jab tak samjh nahi pata
Tu mera koi gunah-o-sawab mat likhna 
 
Ajab Hain Deen Ke Ahkam Arbi Mein Bheje
Ke jaise deen faqat arbi logon ke liye ho
نظم
عجب ہے، دین کے احکام عربی میں بھیجے
کے جیسے دین فقط عربی لوگوں کے لئے ہو
 
میرے عدیل تیرے فیصلوں پہ شکوہ نہیں
مگر یہ دکھ ہے تیرا بندہ مشکلوں میں ہے
 
میں کشمکش میں ہوں کس کس کا اعتبار کروں
تیرے صحیفوں کے بے میل ترجمے ہوئے ہیں
 
میں عربی سکھ رہاہوں کی تیری مان سکوں
پر اس میں وقت لگے گا سو مجھ کو مہلت دے
 
میں تیری بات کو جب تک سمجھ نہیں پاتا
تو میرا کوئی گناہ و ثواب مت لکھنا 
 
عجب ہے، دین کے احکام عربی میں بھیجے
کے جیسے دین فقط عربی لوگوں کے لئے ہو

اپنا تبصرہ بھیجیں