Yeh Tanhai Yeh Azlat Aye Dil Aye Dil| Anwar Shaoor

Yeh Tanhai Yeh Azlat Aye Dil Aye Dil| Anwar Shaoor

Yeh Tanhai Yeh Azlat Aye Dil Aye Dil
Jawani mein nah halat aye dil aye dil

Nigar hota to koi baat bhi thi
Bayabaan mein yeh wehshat aye dil aye dil

Bhula kiya iss bhari duniya mein tanha
Wohi hai khoob surat aye dil aye dil

Kisay hoti nahi uss ki zaroorat
Magar itni zaroorat aye dil aye dil

Zamana chahye dil jeente ko
Yeh be tab yeh ajlat aye dil aye dil

Yeh aansu hain koi moti nahi hain
Lutatay hain yeh dulat aye dil aye dil

Shaoor aaya howa betha hai kab se
Yeh be hoshi yeh ghaflat aye dil aye dil

Yeh tanhai yeh azlat aye dil aye dil
Jawani mein nah halat aye dil aye dil
غزل
یہ تنہائی یہ عزلت اے دل اے دل
جوانی میں نہ حالت اے دل اے دل

نگر ہوتا تو کوئی بات بھی تھی
بیاباں میں یہ وحشت اے دل اے دل

بھلا کیا اِس بھری دنیا میں تنہا
وہی ہے خوب صورت اے دل اے دل

کسے ہوتی نہیں اُس کی ضرورت
مگر اتنی ضرورت اے دل اے دل

زمانہ چاہئے دل جیتنے کو
یہ بے تاب یہ عجلت اے دل اے دل

یہ آنسو ہیں کوئی موتی نہیں ہیں
لٹاتے ہیں یہ دولت اے دل اے دل

شعور آیا ہوا بیٹھا ہے کب سے
یہ بے ہوشی یہ غفلت اے دل اے دل

یہ تنہائی یہ عزلت اے دل اے دل
جوانی میں نہ حالت اے دل اے دل

اپنا تبصرہ بھیجیں