Yeh Iss Ki Mohabbat Hai Keh Rokta Hai Tere Pass

Yeh Iss Ki Mohabbat Hai Keh Rokta Hai Tere Pass

Yeh Iss Ki Mohabbat Hai Keh Rokta Hai Tere Pass
Warna teri daulat ke siwa kya hai tere pass

Darya ke tajawoz ka bura manne wale
Darya ka hi chhora howa raqba hai tere pass

Ab bhi tujhe lagta hai keh aazad nahi tou
Har rang ka har tarz ka burqa hai tere pass

Woh tujh se zahanat mein kahin aage khari hai
Thora sa magar husan zyada hai tere pass

Auroon ki bhi qismat ka silla milta hai tujh ko
Aisa koi qismat ka sitara hai tere pass

Samjhen tu ishara hai yeh qudrat ki taraf se
Tanhai mere pass hai kamra hai tere pass

Taqseem bhi taqseem nahi lagti kisi ko
Deewar uthane ka saleeqa hai tere pass

Mazkoor yahi raat hai darya ke kinare
Mazkoor yahi aakhri mauqa hai tere pass

Yeh iss ki mohabbat hai keh rokta hai tere pass
Warna teri daulat ke siwa kya hai tere pass
غزل
یہ اس کی محبت ہے کہ رکتا ہے تیرے پاس
ورنہ تری دولت کے سوا کیا ہے تیرے پاس

دریا کے تجاوز کا برا ماننے والے
دریا کا ہی چھوڑا ہوا رقبہ ہے تیرے پاس

اب بھی تجھے لگتا ہے کہ آزاد نہیں تو
ہر رنگ کا ہر طرز کا برقعہ ہے تیرے پاس

وہ تجھ سے ذہانت میں کہیں آگے کھڑی ہے
تھوڑا سا مگر حسن زیادہ ہے تیرے پاس

اوروں کی بھی قسمت کا صلہ ملتا ہے تجھ کو
ایسا کوئی قسمت کا ستارہ ہے تیرے پاس

سمجھیں تو اِشارہ ہے یہ قدرت کی طرف سے
تنہائی مرے پاس ہے کمرہ ہے تیرے پاس

تقسیم بھی تقسیم نہیں لگتی کسی کو
دیوار اُٹھانے کا سلیقہ ہے تیرے پاس

مذکور یہی رات ہے دریا کے کنارے
مذکور یہی آخری موقعہ ہے تیرے پاس

یہ اس کی محبت ہے کہ رکتا ہے تیرے پاس
ورنہ تری دولت کے سوا کیا ہے تیرے پاس

اپنا تبصرہ بھیجیں