Woh To Khushboo Hai Hawaon Mein Bikhar Jaye Ga

Woh To Khushboo Hai Hawaon Mein Bikhar Jaye Ga

Woh To Khushboo Hai Hawaon Mein Bikhar Jaye Ga
Masla phool ka hai phool kidhar jaye ga

Hum to samjhe thay keh ik zakhm hai bhar jaye ga
Kia khabar thi keh rag jaan mein utar jaye ga

Woh hawaon ki tarah khana bajan phirta hai
Aik jhonka hai jo aaye ga guzar jaye ga

Woh jab aaye ga to phir iss ki rafaqat ke liye
Mausam-e-gul mere aangan mein thehr jaye ga

Aakhrash woh bhi kahin rait peh bethi hogi
Tera yeh pyaar bhi darya hai utar jaye ga

Mujh ko tehzeeb ke barzakh ka banaya waris
Juram yeh bhi mere ajdaad ke sar jaye ga

Woh to khushboo hai hawaon mein bikhar jaye ga
Masla phool ka hai phool kidhar jaye ga
غزل
وہ تو خوشبو ہے ہواؤں میں بکھر جائے گا
مسلہ پھول کا ہے پھول کدھر جائے گا

ہم تو سمجھے تھے کہ اک زخم ہے بھر جائے گا
کیاخبر تھی کہ رگ جاں میں اتر جائے گا

وہ ہواؤں کی طرح خانہ بجاں پھرتا ہے
ایک جھونکا ہے جو آئے گا گزر جائے گا

وہ جب آئے گا تو پھر اس کی رفاقت کے لئے
موسم گل مرے آ نگن میں ٹھہر جائے گا

آخرش وہ بھی کہیں ریت پہ بیٹھی ہوگی
تیرا یہ پیار بھی دریا ہے اتر جائے گا

مجھ کو تہذیب کے برزخ کا بنایا وارث
جرم یہ بھی مرے اجداد کے سر جائے گا

وہ تو خوشبو ہے ہواؤں میں بکھر جائے گا
مسلہ پھول کا ہے پھول کدھر جائے گا

اپنا تبصرہ بھیجیں