Tujhe Nah Aayen Gi Muflis Ki Mushkilat Samjh

Tujhe Nah Aayen Gi Muflis Ki Mushkilat Samjh

Tujhe Nah Aayen Gi Muflis Ki Mushkilat Samjh
Mein chhotay logon ke ghar ka bara hoon baat samjh

Mere ilawa hain chay log munhasir mujh par
Meri har aik museebat ko zarb saat samjh

Falak se kat ke zameen par giri patangen dekh
To hijr katnay walon ki nafsiyaat samjh

Shuru din se adheera gaya hai mere wajood
Jo dikh raha hai isay meri baqiyat samjh

Kitab ishq mein har aah aik aayat hai
Aur aansowon ko haroof muqttaat samjh

Karen yeh kaam tu kunbay ka waqt katta hai
Hamaray hathoon ko ghar ki ghari ke hath samjh

Dil o dimagh zaroori hain zindagi ke liye
Yeh hath paon izaafi sahuliyat samjh

Tujhe nah aayen gi muflis ki mushkilat samjh
Mein chhotay logon ke ghar ka bara hoon baat samjh
غزل
تجھے نہ آئیں گی مفلس کی مشکلات سمجھ
میں چھوٹے لوگوں کے گھر کا بڑا ہوں بات سمجھ

مرے علاوہ ہیں چھ لوگ منحصر مجھ پر
مری ہر ایک مصیبت کو ضرب سات سمجھ

فلک سے کٹ کے زمیں پر گری پتنگیں دیکھ
تو ہجر کاٹنے والوں کی نفسیات سمجھ

شروع دن سے ادھیڑا گیا ہے میرا وجود
جو دِکھ رہا ہے اسے میری باقیات سمجھ

کتاب عشق میں ہر آہ ایک آیت ہے
اور آنسوؤں کو حروف مقطعات سمجھ

کریں یہ کام تو کنبے کا وقت کٹتا ہے
ہمارے ہاتھوں کو گھر کی گھڑی کے ہاتھ سمجھ

دل وہ دماغ ضروری ہیں زندگی کے لئے
یہ ہاتھ پاؤں اِضافی سہولیات سمجھ

تجھے نہ آئیں گی مفلس کی مشکلات سمجھ
میں چھوٹے لوگوں کے گھر کا بڑا ہوں بات سمجھ

اپنا تبصرہ بھیجیں