Samaan To Be Had Hai Dil Mein

Samaan To Be Had Hai Dil Mein

Samaan To Be Had Hai Dil Mein
Sab kuchh kaar aamad hai dil mein

Aap kabhi tashreef to layen
Ik aali masnad hai dil mein

Bay bismillah khule gi
Jo qafal abjad hai dil mein

Ishq ki awsat kam nahi hoti
Aaj bhi sad fi sad hai dil mein

Koi behes nah koi hajat
Tu be rad o qad hai dil mein

Takta rehta hoon sehra se
Aik hara gunband hai dil mein

Ishq ho jaise jan ki bazi
Aisi shad-o-mad hai dil mein

Uss ghar ki wasat kia kehna
Tum jaisa khush qad hai dil mein

Yeh Jannat bhi hai duzakh bhi
Naik hai dil mein bad hai dil mein

Be lasi se aaye ho such moch
Ya koi maqsad hai dil mein

Sar peh zaroori kaam pare hain
Aur aamad aamad hai dil mein

Hum jate hain fatiha parhne
Pur khun ka mashhad hai dil mein

Kyun khainchte hain shaoor aap aakhir
Kia hum se kuchh kad hai dil mein

Samaan to be had hai dil mein
Sab kuchh kaar aamad hai dil mein
غزل
ساماں تو بے حد ہے دل میں
سب کچھ کار آمد ہے دل میں

آپ کبھی تشریف تو لائیں
اک آلی مسند ہے دل میں

بائے بسم اللہ کھولے گی
جو قفل ابجد ہے دل میں

عشق کی اوسط کم نہیں ہوتی
آج بھی صد فی صد ہے دل میں

کوئی بحث نہ کوئی حجت
تو بے رد و کد ہے دل میں

تکتا رہتا ہوں صحرا سے
ایک ہرا گنبد ہے دل میں

عشق ہو جیسے جان کی بازی
ایسی شد و مد ہے دل میں

اُس گھر کی وسعت کیا کہنا
تم جیسا خوش قد ہے دل میں

یہ جنت بھی ہے دوزخ بھی
نیک ہے دل میں بد ہے دل میں

بے لوثی سے آئے ہو سچ مچ
یا کوئی مقصد ہے دل میں

سر پہ ضروری کام پڑے ہیں
اور آمد آمد ہے دل میں

ہم جاتےہیں فاتحہ پڑھنے
پرکھوں کا مشہد ہے دل میں

کیوں کھنچتے ہیں شعور آُپ آخر
کیا ہم سے کچھ کد ہے دل میں

اپنا تبصرہ بھیجیں