Rahe Jo Zindagi Mein Zindagi Ka Aasra Ho Kar

Rahe Jo Zindagi Mein Zindagi Ka Aasra Ho Kar

Rahe Jo Zindagi Mein Zindagi Ka Aasra Ho Kar
Wohi nikle sareer aara qayamat mein khuda ho kar

Haqeqat dar haqeqat butkade mein hai na kaabe mein
Nigah-e-shauq dhoke day rahi hai rahnuma ho kar

Maal-e-kar se gulshan ki har patti larazti hai
Keh aakhir rang-o-bo urjayege ek din howa ho kar

Abhi kal tak jawani ke khumistan thay nigahon mein
Yeh duniya do hi din mein reh gai hai kia se kia ho kar

Mere sajdon ki ya rab tishna kaami kyun nahi jati
Yeh kia hai be etinai apne bande se khuda ho kar

Sirisht-e-dil mein kis ne koot kar bhar di hai betabi
Azal mein kon ya rab mujh se baitha tha khafa ho kar

Yeh pichli raat yeh khamoshiyan yeh dubte tare
Nigah-e-shauq behki phir rahi hai iltija ho kar

Bala se kuch ho hum eshan apni kho na chorrenge
Hamesha be wafaon se milenge ba wafa ho kar

Rahe jo zindagi mein zindagi ka aasra ho kar
Wohi nikle sareer aara qayamat mein khuda ho kar
غزل
رہے جوزندگی میں زندگی کا آسرا ہو کر
وہی نکلے سریر آرا قیامت میں خدا ہو کر

حقیقت در حقیقت بتکدے میں ہے نہ کعبہ میں
نگاہ شوق دھوکے دے رہی ہے رہنما ہوکر

مال کار سے گلشن کی ہر پتی لرزتی ہے
کہ آخر رنگ و بو اڑجائیں گے اک دن ہوا ہو کر

ابھی کل تک جوانی کے خمستاں تھے نگاہوں میں
یہ دنیا دو ہی دن میں رہ گئی ہےکیا سے کیا ہوکر

مرے سجدوں کی یا رب تشنہ کامی کیوں نہیں جاتی
یہ کیا بے اعتنائی اپنے بندے سے خدا ہوکر

سرشت دل میں کس نے کوٹ کر بھر دی ہے بیتابی
ازل میں کون یا رب مجھ سے بیٹھا تھا خفا ہو کر

یہ پچھلی رات یہ خاموشیاں یہ ڈوبتے تارے
نگاہ شوق بہکی پھر رہی ہےالتجا ہوکر

بلاس کچھ ہو ہم احسان اپنی خود نہ چھوڑیں گے
ہمیشہ بے وفاؤں سے ملیں گے باوفا ہو کر

رہے جو زندگی میں زندگی کا آسرا ہو کر
وہی نکلے سریر آرا قیامت میں خدا ہو کر

اپنا تبصرہ بھیجیں