Mushtaq Badastoor Zamana Hai Tumhara

Mushtaq Badastoor Zamana Hai Tumhara

Mushtaq Badastoor Zamana Hai Tumhara
Aane se fosun khaiz nah aana hai tumhara

Laila ki hikayat bhi hikayat hai tumhari
Shireen ka fasana bhi fasana hai tumhara

Iss dil ki khabar tum se ziyada kisay hogi
Andaz magar be khabarana hai tumhara

Tum husan mujassim ho bila shirkat gheray
Naqabil-e-taqseem khazana hai tumhara

Dil mein koi aa jaye tou wapis nahi jata
Dushwar yahan se kahin jana hai tumhara

Tum se mutassir hain naye hoon keh puranay
Asloob naya hai keh purana hai tumhara

Kyun roshni-o-rang se mamoor nah ho dil
Sunsaan sahi aaina khana hai tumhara

Samjhaya bujhaya nah karo dil ko shaoor ab
Kambakht ne kehna kabhi mana hai tumhara

Mushtaq badastoor zamana hai tumhara
Aane se fosun khaiz nah aana hai tumhara
غزل
مشتاق بدستور زمانہ ہے تمہارا
آنے سے فسوں خیز نہ آنا ہے تمہارا

لیلیٰ کی حکایت بھی حکایت ہے تمہاری
شیرں کا فسانہ بھی فسانہ ہے تمہارا

اِس دل کی خبر تم سے زیادہ کسے ہوگی
انداز مگر بے خبرانہ ہے تمہارا

تم حسن مجسم ہو بلا شرکت غیرے
ناقابل تقسیم خزانہ ہے تمہارا

دل میں کوئی آ جائے تو واپس نہیں جاتا
دشوار یہاں سے کہیں جانا ہے تمہارا

تم سے متاثر ہیں نئے ہوں کہ پرانے
اسلوب نیا ہے کہ پرانا ہے تمہارا

کیوں روشنی و رنگ سے معمور نہ ہو دل
سنسان سہی آئنہ خانہ ہے تمہارا

سمجھایا بجھایا نہ کرو دل کو شعور اب
کمبخت نے کہنا کبھی مانا ہے تمہارا

اپنا تبصرہ بھیجیں