Muddaton Hijr Peh Rakhen Gay Ijaraa Apna

Muddaton Hijr Peh Rakhen Gay Ijaraa Apna

Muddaton Hijr Peh Rakhen Gay Ijaraa Apna
Aao yakmasht utha aayen khasara apna

Uski parchai talak ki bhi mein haqdaar nahi
Mein keh jis shakhs ko kehh deti thi sara apna

Uss ko pehli si mohabbat nah hoi doosri bar
Uss peh phir isam nah chal paya dubara apna

Kal churra aai yeh kehte hoye daman khud se
Ab tere sath nahi hota guzara apna

Aik din log nazar bhar ke hamein dekhen gay
Aik din auj peh aaye ga sitara apna

Kitna mushkil hai usay rasmi dilaasa dena
Jis ne khoya ho koi jan se pyaara apna

Muddaton hijr peh rakhen gay ijaraa apna
Aao yakmasht utha aayen khasara apna
غزل
مدتوں ہجر پہ رکھیں گے اِجارہ اپنا
آؤ یکمشت اُٹھا آئیں خسارا اپنا

اُسکی پرچھائی تلک کی بھی میں حقدار نہیں
میں کہ جس شخص کو کہہ دیتی تھی سارا اپنا

اُس کو پہلی سی محبت نہ ہوئی دوسری بار
اُس پہ پھر اِسم نہ چل پایا دوبارہ اپنا

کل چھڑا آئی یہ کہتے ہوئے دامن خود سے
اب ترے ساتھ نہیں ہوتا گزارا اپنا

ایک دن لوگ نظر بھر کے ہمیں دیکھیں گے
ایک دن اوج پہ آئے گا ستارہ اپنا

کتنا مشکل ہے اُسے رسمی دلاسہ دینا
جس نے کھویا ہو کوئی جان سے پیار اپنا

مدتوں ہجر پہ رکھیں گے اِجارہ اپنا
آؤ یکمشت اُٹھا آئیں خسارا اپنا
Poet: Komal Joya

اپنا تبصرہ بھیجیں