Kuchh Din Tou Kar Tawoon Aye Khush Sifaat

Kuchh Din Tou Kar Tawoon Aye Khush Sifaat

Kuchh Din Tou Kar Tawoon Aye Khush Sifaat Mujhe Se
Tanha nah ho sake gi tatheer-e-zaat mujh se

Faryad aye samat insaf aye furasat
Karte hain ahl duniya duniya ki baat mujh se

Heran hoon keh uss tak kis kis jahat se pahunchun
Aawargi talab hain sad haa jahat mujh se

Kyun aye hayat rafta rokay hoye hai rasta
Kia chahti hai aakhir aye be sabaat mujh se

Younan ki sakhi tu talkhat nazar karden
Pani aziz rakhen ahl furat mujh se

Gardish mein hain sitare hai koi jo pukare
Aa aye ghareeb kocha le ja zakat mujh se

Wa hai daricha dil ik cheekh ban ke dar aa
Sar goohia kahan tak aye sard raat mujh se

Kuchh Din Tou Kar Tawoon Aye Khush Sifaat Mujhe Se
Tanha nah ho sake gi tatheer-e-zaat mujh se
غزل
کچھ دن تو کر تعاون اے خوش صفات مجھ سے
تنہا نہ ہو سکے گی تطہیر ذات مجھ سے

فریاد اے سماعت انصاف اے فراست
کرتے ہیں اہل دنیا دنیا کی بات مجھ سے

حیران ہوں کہ اُس تک کس کس جہت سے پہنچوں
آوارگی طلب ہیں صد ہا جہات مجھ سے

کیوں اے حیات رفتہ رو کے ہوئے ہے رستہ
کیا چاہتی ہے آخر اے بے ثبات مجھ سے

یونان کے سخی تو تلخات نذر کر دیں
پانی عزیز رکھیں اہل فرات مجھ سے

گردش میں ہیں ستارے ہے کوئی جو پکارے
آ اے غریب کوچہ لے جا ذکات مجھ سے

وا ہے دریچہ دل اک چیخ بن کے در آ
سر گوشیاں کہاں تک اے سرد رات مجھ سے

اپنا تبصرہ بھیجیں