Jo Jal Uthi Hai Shabistan Mein Yaad Si Kia Hai

Jo Jal Uthi Hai Shabistan Mein Yaad Si Kia Hai

Jo Jal Uthi Hai Shabistan Mein Yaad Si Kia Hai
Yeh jhalmalahaten yeh roshni kia hai

Kisi se tark talluq ke baad bhi milna
Bura zaroor hai lekin kabhi kabhi kia hai

Ab apne hal peh hum dehaan hi nahi dete
Nah jane be khabri hai keh aaghi kia hai

Yahi sawal nahi hai faqt keh hum kia hain
Yeh kainat hai kia aur zindagi kia hai

Hansi jo dekh rahe ho hamare huntun par
Zuban hal se ik cheekh hai hansi kia hai

Shaoor abhi se yeh khushfehmiyan yeh umeedein
Abhi to sirf mulaqat hai abhi kia hai

Jo jal uthi hai shabistan mein yad si kia hai
Yeh jhalmalahaten yeh roshni kia hai
غزل
جوجل اُٹھی ہے شبستاں میں یاد سی کیا ہے
یہ جھلملا ہٹیں کیا ہیں یہ روشنی کیا ہے

کسی سے ترک تعلق کے بعد بھی ملنا
برا ضرور ہے لیکن کبھی کبھی کیا ہے

اب اپنے حال پہ ہم دھیان ہی نہیں دیتے
نہ جانے بے خبری ہے کہ آگہی کیا ہے

یہی سوال نہیں ہے فقط کہ ہم کیا ہیں
یہ کائنات ہے کیا اور زندگی کیا ہے

ہنسی جو دیکھ رہے ہو ہماے ہونٹوں پر
زبان حال سے اک چیخ ہے ہنسی کیا ہے

شعور ابھی سے یہ خوش فہمیاں یہ اُمیدیں
ابھی تو صرف ملاقات ہے ابھی کیا ہے

جوجل اُٹھی ہے شبستاں میں یاد سی کیا ہے
یہ جھلملا ہٹیں کیا ہیں یہ روشنی کیا ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں