Har Gali Har Aik Gaon Aur Ghar Khatray Mein Hai

Har Gali Har Aik Gaon Aur Ghar Khatray Mein Hai

Har Gali Har Aik Gaon Aur Ghar Khatray Mein Hai
Zalimoo dekhon idhar dekho nagar khartary mein hai

Sindh bhi mera balochistan bhi Punjab bhi
Shaakh ka kia tazkira pura shajar khatray mein hai

Shor-e-darya sunn ameer-e-shahr tujh ko ilm ho
Kaisay zalim mouj ke hathon bashar khatray mein hai

Tujh ko kia kachay gharon ke tootnay ka dard ho
Konsa tera yeh lota maal-o-zar khatray mein hai

Be ghari ka khauf bhi hai bhook bhi hai karb bhi
Karwaan-e-zindagi sham-o-sehar khatray mein hai

Har gali har aik gaon aur ghar khatray mein hai
Zalimoo dekhon idhar dekho nagar khartary mein hai
غزل
ہرگلی ، ہر ایک گاؤں اور گھر خطرے میں ہے
ظالمو! دیکھوں اِدھر دیکھو، نگر خطرے میں ہے

سندھ بھی، میرا بلوچستان بھی ، پنجاب بھی
شاخ کا کیا تذکرہ پورا شجر خطرے میں ہے

شورِ دریا سن امیرِ شہر تجھ کو علم ہو
کیسے ظالم موج کے ہاتھوں بشر خطرے میں ہے

تجھ کو کیا کچے گھروں کے ٹوٹنے کا درد ہو
کونسا تیرا یہ لوٹا مال و زر خطرے میں ہے

بے گھری کا خوف بھی ہے بھوک بھی ہے کرب بھی
کاروانِ زندگی شام و سحر خطرے میں ہے

ہرگلی ، ہر ایک گاؤں اور گھر خطرے میں ہے
ظالمو! دیکھوں اِدھر دیکھو، نگر خطرے میں ہے
Poet: Komal Joya

اپنا تبصرہ بھیجیں